خاتون کے قصداً کھانسنے کے بعد ایک سالہ بچے کو بخار نے آ لیا، ویڈیو دیکھیں –

کیلی فورنیا: امریکی ریاست کیلی فورنیا میں ایک سالہ بچے پر خاتون قصداً کھانسی، جس کے بعد بچے کو بخار ہو گیا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق رواں ماہ کے آغاز میں کیلی فورنیا کے ساحلی شہر سان جوز میں ایک خاتون نے یوگرٹ لینڈ میں واقع ایک ریسٹورنٹ میں حدر درجے بے حسی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک عورت کا غصہ اس کے ایک سالہ ننھے بچے پر نکال لیا۔

بے حسی کے اس خوف ناک مظاہرے کی فوٹیج سی سی ٹی وی نے محفوظ کر لی، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ اس نے اپنے منھ سے ماسک ہٹایا اور واکر میں لیٹے ہوئے ننھے بچے پر تین بار کھانسی کی۔

پولیس نے میڈیا کو بتایا کہ مذکورہ خاتون کی شناخت علاقے کے ضلعی اسکول کی ملازمہ کی حیثیت سے ہوئی ہے، کھانسنے والی خاتون کو بچے کی ماں پر غصہ تھا کہ وہ ریسٹورنٹ میں آرڈر کے انتظار میں سماجی فاصلے کی ہدایات کی صحیح سے تعمیل نہیں کر رہی تھی، اس لیے وہ انتقاماً اس کے بچے پر کھانسی۔

سان جوز کے اسکول اوک گروو اسکول ڈسٹرکٹ نے واقعہ سامنے آنے کے بعد بیان دیا کہ مذکورہ نامعلوم اسکول ملازمہ فی الوقت چھٹیوں پر ہے، اور وہ طلبہ کو خدمات فراہم نہیں کر رہی ہے۔

بچے کی ماں میریا مویا کا کہنا تھا کہ 60 سالہ عورت کے میرے بچے پر کھانسنے کے بعد میرے بیٹے کو تیز بخار نے آ لیا، مجھے یقین ہے کہ بوڑھی عورت نے یہ نسلی تعصب کے طور پر کیا، اس نے میرے سامنے یہ بہت تیزی سے کیا، میں اسے دیکھ کر صدمے کی کیفیت میں آ گئی تھی، وہ میرے بچے کے واکر کے پاس آئی، اپنا ماسک ہٹایا اور تین بار اس پر کھانسی۔

امریکی خاتون نے 5 سالہ بچے کو نہایت ظالمانہ طریقے سے مار دیا

معلوم ہوا ہے کہ میریا مویا نے اپنے بچے کا کرونا ٹیسٹ نہیں کرایا، تاہم اب وہ بخار سے صحت یاب ہو رہا ہے، فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ خاتون کے کھانسنے کے بعد بچے کی ماں نے تیزی سے اس حملے سے اسے بچانے کی کوشش کی۔

پولیس بچے پر کھانسنے والی اس خاتون کو تلاش کر رہی ہے، فی الوقت یہی معلوم ہو سکا ہے کہ مذکورہ خاتون اسکول میں ملازمت کرتی ہے تاہم پوری شناخت سامنے نہیں آ سکی ہے۔

fb-share-icon0

Tweet
20

Comments

comments




Source link

About Raja

Check Also

ننھی گلہری کی سردیاں گزارنے کے لیے معصوم حرکت، لیکن گاڑی مالک مشکل میں پڑ گیا –

شمالی ڈکوٹا: امریکا میں ایک ننھی گلہری نے سردیاں گزارنے کے لیے ایک ایسی معصوم …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *