کرونا کا پھیلاؤ روکنے کے لیے سائنس دانوں کا بڑا تجربہ کامیاب

[ad_1]

بگوٹا: جنوبی امریکا میں واقع ملک کولمبیا کے سائنس دانوں نے ’الٹرا وائلیٹ لائٹ‘ کی ایک قسم ’فار یو وی سی‘ کی مدد سے کروناوائرس کے پھیلاؤ روکنے کا ایک کامیاب تجربہ کیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کولمبیا یونیورسٹی میں ہونے والی تحقیق میں یہ بات ثابت ہوئی کہ ’فار یو وی سی‘ کی مصنوعی شعاعیں ہوا میں موجود کروناوائرس کو ختم کرسکتی ہیں۔

ریسرچ رپورٹ کے مطابق سائنس دانوں نے تجربے کے دوران مخصوص جگہ پر کرونا وائرس کی نمی کے ذرات کو فار یو وی سی لائٹ کے سامنے سے گزارا جس کے بعد وائرس کو اکھٹا کیا گیا تاکہ نتیجہ معلوم کیا جاسکے۔

تحقیقی مطالعے کی سربراہی کرنے والے ڈاکٹر ڈیوڈ برونر کا کہنا ہے کہ تجربے کی رپورٹ سے واضح ہوا کہ مذکورہ لائٹ نے ہوا میں موجود کرونا کے ذرات کا 99.9 فیصد تک خاتمہ کردیا، وائرس کا کوئی بھی ذرا زندہ نہیں بچا۔

’کرونا صرف 34 منٹ میں مرسکتا ہے‘ امریکی سائنسدان کا دعویٰ

انہوں نے بتایا کہ مذکورہ روشنی کرونا کے خلاف مؤثر ثابت ہوئی جس کے باعث ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ فار یو وی سی سسٹم کو عوامی مقامات پر نصب کریں گے جو مہلک وائرس کے پھیلاؤ میں معاونت کرے گا۔

’کرونا ویکسین‘ سے مریضوں کا علاج کب شروع کیا جائے گا؟

ڈاکٹر کا مزید کہنا تھا کہ ہم اس سسٹم کی پیشگی پیداوار پر بھی کام کررہے ہیں، یہ سرجیکل ماسک اور سماجی فاصلوں کا متبادل نہیں ہوسکتا، لیکن ہم اسے کرونا کے خلاف نیا ہتھیار کہہ سکتے ہیں۔

fb-share-icon0

Tweet
20

Comments

comments



[ad_2]
Source link

About Raja

Check Also

انسٹاگرام اور میسنجر ایک ہونے کے قریب –

[ad_1] سماجی رابطے کی مقبول ترین ویب سائٹ فیس بک نے اپنے پلیٹ فارمز کو …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *